زرعی پیداوار میں اضافے کے لیے انفارمیشن ٹیکنالوجی کو بروئے کار لاتے ہوئے کسانوں کو نئے رجحانات سے آراستہ کریں گے

uaf-agri-techفیصل آباد 13نومبر2013ء ( زرعی میڈیا ڈاٹ کام) زرعی یونیورسٹی فیصل آباد اور نیشنل آئی سی ٹی ریسرچ و ڈویلپمنٹ فنڈ ملک میں زرعی پیداوار میں اضافے کے لیے انفارمیشن ٹیکنالوجی کو بروئے کار لاتے ہوئے کسانوں کو نئے رجحانات سے آراستہ کریں گے۔یہ بات وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کے جنرل منیجر تجزیہ کاری احمد افضل کی وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد خاں سے ان کے چیمبر میں ملاقات کے دوران بتائی گئی۔احمد افضل نے کہا کہ ملک کو ترقی کی راہوں پر گامزن کرنے کے لیے وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی بھر پور وسائل بروئے کار لا رہی ہے۔ اس ضمن میں آئی سی ٹی ریسرچ اینڈ ڈیویلپمنٹ فنڈ مختلف تحقیقی اداروں کے ساتھ مل کر نئے امکانات پر تحقیق کے لیے کاوشیں کر رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ پریسین ایگریکلچر کے شعبے میں آئی ٹی کے فروغ کے لیے زرعی یونیورسٹی نے جو کوششیں کی ہیں ان میں بہتری کے لیے تعاون کی نئی راہیں تلاش کی جائیں گی۔یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد خاں نے بتایا کہ کینیڈا اور دیگر ممالک کی مدد سے جی آئی ایس اور سپیس ٹیکنالوجی کو زرعی پیداوار میں اضافے کے لیے اقدامات بروئے کار لائے جارہے ہیں جبکہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے پنجاب کے تمام اضلاع میں کھاد کے متناسب استعمال اور حسب توقع گندم کی پیداوار کے حصول کے لیے نظام وضع کیا گیا ہے جس سے کسان کمپیوٹر کے ذریعے راہنمائی حاصل کر سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کی مدد سے اس قسم کی نئی جدتیں بروئے کار لانے کے لیے یونیورسٹی سائنسدان نئے منصوبوں کو حتمی شکل دے رہے ہیں۔ملاقات میںیونیورسٹی کے ڈائریکٹر تحقیق پروفیسر ڈاکٹر آصف علی بھی موجود تھے جنہوں نے یونیورسٹی میں جاری نئے ترقیاتی منصوبوں کے بارے میں بریفنگ بھی دی ۔

Copy Rights @ ZaraiMedia.com

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More