آسٹریلیا۔پاکستان ایگریکلچر سیکٹر لنکج پروگرام :اے ایس ایل پی

زرعی یونیورسٹی فیصل آباد
زرعی یونیورسٹی فیصل آباد

فیصل آباد 09 اکتوبر 2013ء (زرعی میڈیا ڈاٹ کام)زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر اقرار احمد خاں نے کہا ہے کہ ملک میں وائرس سے پاک نرسریوں کو فروغ دے کر ترشاوہ پھلوں کی فی ایکڑ پیداوار کو بین الاقوامی سطح پر بڑھاتے ہوئے اس کی برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ کیا جا سکتا ہے۔ یہ باتیں انہوں نے آسٹریلیا۔پاکستان ایگریکلچر سیکٹر لنکج پروگرام (اے ایس ایل پی) کے تحت یونیورسٹی میں ترشاوہ پھلوں کی نرسری کی بہتر نشوونما اور دیکھ بھال سے متعلق ورکشاپ میں شرکت کیلئے آنے والے آسٹریلوی سائنس دانوں ڈاکٹر طاہر خورشید‘ ڈاکٹر نیریڈا ‘ڈاکٹر جیسن بووے اور منور رضا کاظمی پر مشتمل وفد سے اپنے چیمبر میں ملاقات کے دوران کہیں۔ ڈاکٹر اقرار احمد خاں نے کہا کہ گزشتہ دو دہائیوں کے دوران ترشاوہ پھلوں خصوصاً کینو کے پودوں میں مختلف بیماریوں کے باعث پیداواری صلاحیت میں نمایاں کمی ہوئی ہے لہٰذا وائرس سے پاک نرسریوں میں پرورش پانے والے صحت مند پودوں کی بہتر دیکھ بھال کے ذریعے پیداوار کو بڑھانے کیلئے تربیتی ورکشاپس کا انعقاد کلیدی اہمیت کی حامل ہوگا۔آسٹریلوی سائنس دانوں نے ازاں بعد انسٹی ٹیوٹ آف ہارٹیکلچرل سائنسز کے زیراہتمام لینڈ سکیپ سٹوڈیو میں منعقدہ ورکشاپ میں ٹوبہ ٹیک سنگھ‘ فیصل آباد اور پتوکی سے ترشاوہ پھلوں کی نرسری سے تعلق رکھنے والے افراد کو ترشاوہ پودوں کی نرسری میں مختلف مراحل کے دوران دیکھ بھال‘ غذائی ضروریات کے حوالے سے آگاہ کیا۔ورکشاپ میں افتتاحی کلمات میں انسٹی ٹیوٹ آف ہارٹیکلچرل سائنسز کے جواں سال پروفیسرڈاکٹر جعفر جسکانی نے ورکشاپ کے مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے بتایا کہ ورکشاپ کے ذریعے نرسری کی سطح پر پودوں کی بہتر نشوونما اور نگہداشت کا عمل ممکن ہوگا جس سے کھیت میں صحت مند پودوں کے ذریعے بہتر پیداوار ممکن ہوگی۔ آسٹریلوی سائنس دان ڈاکٹر نیریڈا نے ترشاوہ پھلوں کی نرسری کی بہتر نشوونما اور دیکھ بھال سے متعلق لیکچر میں پودوں کی اچھی افزائش کیلئے گملوں کی نامیاتی مٹی‘ پودوں کی غذائی ضروریات ‘ پانی کی ضرورت اور بیماریوں سے تدارک کے بارے میں آگاہ کیا۔جیسن بووے نے نرسری سے متعلق شرکاء کو پیوندکاری کے جدید اور کامیاب طریقہ کار’’چپ بڈنگ‘‘ کے فوائد سے متعلق نہ صرف آگاہ کیا بلکہ عملی طور پر نرسری میں تربیت بھی فراہم کی۔مینگو ریسرچ اسٹیشن شجاع آباد سے تربیتی ورکشاپ کا حصہ بننے والے انعام الحق نے نرسری پودوں کے میڈیا سمیت مختلف مراحل پر پودوں کی نگہداشت‘ غذائی ضروریات اور بہتر پیداوار کیلئے نامیاتی خوراک کے حوالے سے آگاہ کیا۔ انعام الحق نے گملوں کی نامیابی مٹی ’’میڈیا‘‘ کے مرکبات اور عملی تیاری سے تمام شرکاء ورکشاپ کو روشناس کرایا اور اس کے فوائد سے آگاہ کیا۔انہوں نے پرانے ترشاوہ پودوں کو پیوند کاری کے ذریعے دوبارہ پیداواریت کی جانب لانے کی ٹیکنالوجی (ری ورکنگ) کی عملی صورت بھی شرکاء کے سپرد کی۔ ورکشاپ سے شعبہ امراض بتاتات کے چیئرمین پروفیسرڈاکٹر شہباز طالب ساہی نے بھی خطاب کیا۔

Copy Rights @ ZaraiMedia.com

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More