پاکستان میں غربت کے خاتمے کے لیے زرعی شعبے کی ترقی ازحد ضروری

Pakistan and agricultural scientists
Pakistan and agricultural scientists

تاریخ:12-04-2013

لاہور:زرعی میڈیا ڈاٹ کام: پاکستان میں غربت کے خاتمے کے لیے زرعی شعبے کی ترقی ازحد ضروری ہے ۔یہ بات ڈاکٹر اقرار احمد خان وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی فیصل آباد نے ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد میں تیسری بین الاقوامی کانفرنس آف پاکستان سوسائٹی آف اگرانومی کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

اس کانفرنس میں ممتاز ملکی اور غیر ملکی زرعی سائنسدانوں نے شرکت کی ۔ڈاکٹر اقرار احمد نے کہا کہ ملکی معیشت کو مستحکم بنانے اور عوام کے معیار زندگی میں بہتری لانے کے لیے زرعی فصلوں کی پیداوار میں اضافہ وقت کی اہم ضرورت ہے۔ ڈاکٹر عبدالمجید کنٹری مینجر اکارڈا نے اپنے خطاب میں کم پانی سے زیادہ پیداوار حاصل کرنے کی ضرورت پر زوردیا ۔انہوں نے بتایا کہ زرعی یونیورسٹی اور ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کے زرعی سائنسدانوں نے فصلوں کی کاشت کی ایسی ٹیکنالوی وضع کی ہے جس کے استعمال سے پانی کی 40فیصد تک بچت ہوتی ہے۔ انہوں نے شمسی توانائی سے چلنے والے آبپاشی نظام کو متعارف کرانے کی ضرورت پر زور دیا۔
انہوں نے کہا کہ فصلوں کی کاشت کی موجودہ ترتیب میں بہتری لانے کی ضرورت ہے اور فصلوں کی مخلوط کاشت کو فروغ دے کر فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کیا جاسکتاہے۔ڈاکٹر نذیر حسین شاہ ڈائریکٹر جنرل زراعت ریسرچ خیبر پختون خواہ نے اس موقع پر کہا کہ زرعی تحقیق میں جدت پیدا کرنے کے لیے تمام صوبوں کے زرعی سائنسدانوں اور تحقیقی اداروں کے مابین تعاون کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر عابد محمود ڈائریکٹر کاٹن ریسرچ انسٹی ٹیوٹ فیصل آباد نے اپنے خطاب میں کہا کہ ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد نے فصلوں ، سبزیوں اور پھلوں کی نئی اقسام وضع کی ہیں جو زیادہ پیداوار دینے کی صلاحیت رکھتی ہیں ۔ضرورت اس امر کی ہے کہ فصلوں کی نگہداشت کے جدید طریقوں کے ذریعے ان اقسام کی پیداواری استعداد حاصل کی جائے ۔
ڈاکٹر حافظ محمد اکرم صدر پاکستان سوسائٹی آف اگرانومی نے کہا کہ زرعی سائنسدان زرعی شعبے کو درپیش اہم چیلنجوں سے عہدہ برآء ہونے کے لیے تحقیقاتی ترجیحات میں تبدیلی کریں۔ انہوں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی آبادی کی غذائی ضروریات پوری کرنے کے لیے فوڈ سیکورٹی کو بہتر بنایا جائے۔فصلوں کی پیداوار میں اضافے کے ساتھ ساتھ ماحولیاتی آلودگی میں بھی کمی لانی چاہیے ۔آب وہوا میں تبدیلیوں اورپانی کی کمیابی جیسے مسائل کے حل پر بھی توجہ دی جانی چاہیے ۔بعد میں ملکی وغیر ملکی سائنسدانوں نے اپنے اپنے مقالے پیش کئے۔
نظامت زرعی اطلاعات پنجاب

21۔ سر آغا خان سوئم روڈ لاہور

Copyright: Zaraimedia.com

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More