مرغیوں میں انتڑیوں کی بیماریاں ، علامات اور ان کا علاج

17 مارچ 2013

تعارف:poultry-digestive-systemپاکستان میں پولٹری فارمنگ اپنے عروج پر ہے۔لوگ برائلر اور لیئر پال کر خاصہ منافع کما رہے ہیں مگر اس کے ساتھ ساتھ ان میں بیماریوں کے باعث نقصان کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے۔ برائلر اور لیئر سے زیادہ پیداوار حاصل کرنے کے لئے ضروری ہے کہ انہیں جو کچھ کھانے کو دیا جائے وہ ان کی انٹڑیوں سے جذب ہو جس کے لئے ان کی انتڑیوں کا صحت مند ہونا ضروری ہے۔پولٹری انڈسٹری میں انتڑیوں کی بیماریوں سے خاصہ نقصان ہو رہا ہے جس کی وجہ سے خوراک جذب نہیں ہوتی اور مرغیاں کمزور ہونا شروع ہو جاتی ہیں ۔ایک محتاط اندازے کے مطابق پولٹری انڈسٹری میں 60 فیصد سے زیادہ خرچہ خوراک پر ہی آتا ہے اس لئے پولٹری پرندوں میں انتڑیوں کا درست ہونا بہت ضروری ہے۔ مرغیوں میں انتڑیوں کی بیماریاں بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتی ہیں جس میں پرندے کھانا پینا چھوڑ دیتے ہیں اور پتلی بیٹھیں کرتے ہیں۔پولٹری میں بیکٹیریا سے ہونے والی انتڑیایوں کی دو اہم بیماریاں مندرجہ ذیل ہیں۔

نیکروٹک اینٹرائیٹس(Necrotic entritis)

پولٹری برڈز میں انتڑیوں کی یہ بیماری ایک بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتی ہے۔

بیماری کا سبب:

یہ بیماری کلوسٹریڈیم پرفورنجن ٹائپ سی(clostridium perfringens type c) کی وجہ سے ہوتی ہے جو کہ گرام پازیٹو(G+)، سپور فارمنگ ،این ایروبک بیکٹیریا ہے۔ یہ آکسیجن کی غیر موجودگی میں بھی زندہ رہ سکتا ہے اور ٹاکسن پیدا کر کے کافی نقصان پہنچا تا ہے۔یہ بیکٹیریا ، خوراک، بیٹھوں ، مٹی ،اور بچھالی میں پایا جاتا ہے۔

پھیلاو:

پرندوں میں ماحول کا دباو بڑھنے سے ان کے مدافعتی نظام میں کمی آتی ہے ، جس سے یہ بیکٹیریا زیادہ پرورش پاتا ہے اور حملہ کر دیاہے۔ یہ بیماری پرندوں میں متاثرہخوراک کی وجہ سے پھیلتی ہے۔

شرح اموات:

اس بیماری میں پرندے کھانا پینا چوڑدیتے ہیں جس سے ان کی موت ہو سکتی ہے۔اس بیماری میں عام طور پر شرح اموت5 سے 50 فیصد تک ہوتی ہے۔

علامات:

جراثیم کے حملے کے فوراََ بعد پرندے دباو کا شکار ہو جاتے ہیں ، پتلی بیٹھیں کرتے ہیں ، اور کھانا پینا چھوڑ دیتے ہیں۔ انڈے دینے والی مرغیو ں میں پیداوار میں کمی آجاتی ہے۔ پرندے ایک جگہ پر بیٹھ جاتے ہیں ، اور کمزور ہو کر مر جاتے ہیں۔

موت کے بعد علامات:

موت کے بعد پرندوں کی انتڑیوں باہر سے پھولی ہوئی ہوتی ہیں اور ان میں خون کے دھبے نظر آتے ہیں ، انتڑیوں کی سطح ویلوٹ یا تولیے جیسی ہو جاتی ہے اور ٹاکسنز کی وجہ سے انتڑیوں میں زخم ہو جاتے ہیں۔ انٹریوں سے مردہ خلیوں کی وجہ سے بدبو آتی ہے۔پتلی بیٹھوں کی وجہ سے جسم میں پانی کی کمی اور گوشت کی رنگت میں تبدیلی آجاتی ہے۔

تشخیص:

بیماری کی تشخیص علامات، اور لیباٹری کی مدد سے کی جاسکتی ہے۔

علاج:

مدافعتی نظام کو متاثر کرنے والے عوامل کو کم کریں ۔اینٹی بائیوٹک ، پینی سلن(penicillin)، لنکومائیسن(lincomycin)، سٹریپٹومائیسن (Streptomycin)وغیرہ میں سے کوئی بھی اس بیماری کے علاج میں دی جاسکتی ہیں۔اس کے علاوہ مدافعتی نظام میں بہتری کے لئے ملٹی وٹامنز دیں۔

اسیلریٹو اینٹرائیٹس(ulcerative entritis)

یہ بھی انتڑیوں کی ایک اہم بیماری ہے۔

سبب:

یہ بیماری بھی بیکٹیریا کی وجہ سے ہوتی ہے جس کا تعلق بھی گرام پازیٹو(G+) گروپ سے ہے جو کہ سپور فارمنگ اور این ایروبک ہے اس بیکٹیریاکا نام کلو سٹریڈیم کولائینم(clostridium colinum) ہے۔

پھیلاو:

خوراک کا بیٹھوں سے متاثر ہونے سے یہ بیماری ایک پرندے سے دوسرے پرندے میں پھیل سکتی ہے۔ چھوٹے پرندے اس بیماری کا زیادہ شکار ہوتے ہیں۔

شرح اموت:

اس بیماری میں شرح اموات 2سے10فیصد تک ہو سکتی ہے۔

علامات:

اس بیماری میں کوئی واضح علامات نہیں ہوتیں مگر پرندے کھانا پینا چھوڑ دیتے ہیں ، ان کے پَر بکھرے ہوتے ہیں اور کمر جھکی ہوتی ہے۔

موت کے بعد علامات:

بیماری کی ہاد حالت میں انتڑیوں کی سوزش ہو جاتی ہے، جبکہ درینہ حالت میں ا نتڑیوں کی سطح پر پیلے رنگ کے گول زخم بن جاتے ہیں جن کے گرد خون کے دھبے ہوتے ہیں ، یہ آپس میں مل کر بڑھا زخم بناتے ہیں ۔ اس کے علاوہ جگر پرمردہ خلیوں کے گول یا بیضوی دھبے بن جاتے ہیں ۔تلی سوجھ جاتی ہے۔

تشخیص:

بیماری کی تشخیص انتڑیوں اور جگر پر موجود نشانات سے کی جاسکتی ہے

علاج:

پرندوں کی اچھی دیکھ بھال کریں ۔بیمار اور کمزور پرندوں کو علیحدہ کردیں ان کو اینٹی بائیوٹک نیومائیسن 50-100gm/tonne خوراک میں دیں، یا آکیسی ٹیٹراسائیکلن20gm/tonne خوراک میں 2ہفتے تک دیں۔ یاکلورٹیٹراسائیکلن 1gm/4litter پانی میں 4سے8دن تک دی جاسکتی ہے۔ اس کے علاوہ ملٹی وٹامنز بھی دیئے جا سکتے ہیں۔

*ڈاکٹر محمد عرفان انور(ڈی ڈی ایل او، پولٹری)،ڈاکٹر عاصم رفیق(وی او، پولٹری )،ڈاکٹر احمدرضا، ڈاکٹر ملک عثمان نصیر*ڈپٹی ڈسٹرکٹ لائیو سٹاک آفس ( پولٹری پروڈکش) فیصل آبا د۔
Poultry Farming in Pakistan
Copyright:  Zaraimedia.com

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More