کاشتکار تل کی زیادہ کاشت سے بھاری منافع حاصل کریں

اتوار10 فروری
ترقی دادہ اقسام لگائی جائیں تو 800 کلوگرام فی ایکڑ تک پیداوار ہوسکتی ہے ،زرعی ماہرین
ترقی دادہ اقسام لگائی جائیں تو 800 کلوگرام فی ایکڑ تک پیداوار ہوسکتی ہے ،زرعی ماہرین

فیصل آباد (اے پی پی) ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ کے زرعی ماہرین نے کاشتکاروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ تل کی زیادہ سے زیادہ کاشت کر کے بھاری مالی منافع حاصل کریں ۔تائے پنجاب 90 اور پی 40-7 کی کاشت کے بہترین نتائج حاصل ہوسکتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ تل کے بیجوں میں 50 فیصد سے زائد تیل اور 22 فیصد سے زائد پروٹین ہوتی ہے جبکہ کھل میں 42 فیصد پروٹین ہوتی ہے ۔
پاکستان میں تل کی فصل کا اوسط رقبہ 85 ہزار ایکڑ ہے جس سے 200 سے 400 کلوگرام فی ایکڑ پیداوار حاصل کی جارہی ہے لیکن تحقیق سے ثابت ہوتا ہے کہ اگر تل کی ترقی دادہ اقسام کاشت کی جائیں تو 700 سے 800 کلوگرام فی ایکڑ پیداوار بھی حاصل ہوسکتی ہے ۔
زمین کے انتخاب ، تیاری، وقت کاشت ، موزوں اقسام، شرح بیج ، طریقہ کاشت، کھادوں کے استعمال، پودوں کی بروقت گوڈی، آبپاشی اور بیماریوں کے تدارک کو یقینی بنایا جائے تو کاشتکار منافع بخش پیداوار حاصل کرسکتے ہیں۔
Courtesy:Dunya

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More