انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے ویب پورٹل پر اساتذہ کے تمام لیکچرز اپ لوڈ

زرعی یونیورسٹی فیصل آبادہینڈ آؤٹ

uaf_07-feb

فیصل آباد7 فر وری 2013ء ( زرعی میڈیا ڈاٹ کام)زرعی یونیورسٹی فیصل آباد انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے ویب پورٹل پر اساتذہ کے تمام لیکچرز اپ لوڈ کرے گی تاکہ نئی نسل حسب ضرورت ان سے فائدہ اٹھا سکے ۔ ان باتوں کا اظہار یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اقرار احمد خاں نے نیو سینٹ ہال میں یونیورسٹی کے لیکچرارز اور اسسٹنٹ پروفیسرز کے خصوصی اجلاس سے اپنے خطاب کے دوران کیا ۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ 20 سالوں کے دوران یونیورسٹی میں طلبہ کی تعداد 30 ہزار سے زائد ہو جائے گی جسے تعلیم دینے کے لئے ویژن 2030ء تر تیب دیا جا رہا ہے تاکہ انہیں بہترین تعلیمی و تحقیقی سہولتیں میسر آسکیں ۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ پانچ سالوں کے دوران جامعہ عالمی رینکنگ حاصل کرنے میں کامیاب رہی ہے جبکہ آنے والے سالوں کے دوران یونیورسٹی کا کر دار دیہی علاقوں اور پسماندہ طبقات تک بڑھایا جائے گا ۔ وائس چانسلر نے کہا کہ مستقبل کے تناظر میں یونیورسٹی کی داخلہ پالیسی میں بھی بنیادی تبدیلیاں لانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ اس ضمن میں زمینوں کی فرد ملکیت اور ڈومیسائل کی بجائے طالب علم کے میٹرک کی سند میں درج کئے گئے ضلع کی بنیاد پر داخلہ دیا جائے گا تاکہ جعلی سکونتی سرٹیفکیٹس اور فرد ملکیت کے ذریعے داخلے حاصل کرنے والوں کی حوصلہ شکنی کرتے ہوئے حقیقی میرٹ کو یقینی بنایا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ یونیورسٹی میں اسسٹنٹ پروفیسر ز سے لے کر پروفیسرز تک تمام تقرریاں ٹنیور ٹریک سسٹم کے تحت کی جائیں گی ۔ ڈاکٹر اقرار احمد خاں نے کہا کہ 2008ء میں یونیورسٹی کے پاس 300 ملین کے پراجیکٹس تھے جبکہ اب یہ مالیت 2000 ملین روپے تک پہنچ چکی ہے جس میں ابھی بھی 3گنا اضافے کی گنجائش موجود ہے انہوں نے کہا کہ ہائر ایجوکیشن کی مد میں کمیشن کو حکومت کی جانب سے 10 ارب کے مقابلے میں صرف2.5 ارب روپے گرانٹ میسر آئی ہے جس کی وجہ سے اعلیٰ تعلیم کے اداروں میں مالی مسائل پیدا ہو چکے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ توانائی کی ضروریات پوری کرنے کے لئے یونیورسٹی سولر سسٹم اور بائیو انر جی کے منصوبوں کو BOT کی بنیاد پر شرو ع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ کیمپس کمیونٹی کے لئے مسلسل بجلی کی فراہمی یقینی بنائی جا سکے ۔ ان سے پہلے رجسٹرار چوہدری محمد حسین نے حاضرین کو اجلاس کی اہمیت کے بارے میں بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ جامعہ میں 235 لیکچرار خدمات سر انجام دے رہے ہیں جن میں سے 74 خواتین ہیں ان میں سے 46 لیکچرار پی ایچ ڈی کی ڈگریاں حاصل کر چکے ہیں جبکہ 60 کی پی ایچ ڈی ڈگریاں زیر تکمیل ہیں اجلاس سے پہلے یونیورسٹی کے انسٹی ٹیوٹ آف ایگریکلچرل ایکسٹینشن اینڈ رورل ڈویلپمنٹ کی لیکچرار نازیہ جمال جو کہ ایک حادثے کے نتیجے میں زیر علاج ہیں ان کے لئے دعائے صحت بھی کرائی گئی ۔

Agriculture in PakistanCopyright:  Zaraimedia.com

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More