رواں سال زرعی شعبہ کی شرح نمو میں 3.1 فیصد اضافہ

بدھ 6 فروری 2013
خام مال کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے باعث کسانوں کی آمدنی میں کمی ہوئی ہے۔ فوٹو: اسرارالحق/فائل
خام مال کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے باعث کسانوں کی آمدنی میں کمی ہوئی ہے۔ فوٹو: اسرارالحق/فائل

کراچی: گزشتہ سال کے خوفناک سیلابوں کے باوجود2012 کے دوران زرعی شعبہ کی شرح ترقی 3.1فیصد رہیجبکہ 2011 میں شعبہ کی ترقی 2.4 فیصد ریکارڈ کی گئی تھی۔

اسٹیٹ بینک کی سالانہ رپورٹ کے مطابق زرعی پیداوار کیلیے استعمال ہونیوالے خام مال کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کے باعث کسانوں کی آمدنی میں کمی ہوئی ہے، زرعی شعبہ میں لائیو اسٹاک سیکٹر 55.1 فیصد شیئر کیساتھ سرفہرست رہا ۔

اسٹیٹ بینک پاکستان اکانومی رپورٹ کے مطابق مالی سال 2012 کے دوران لائیو اسٹاک کے شعبہ کی شرح ترقی4 فیصد رہی جبکہ درجہ حرارت میں کمی کے باعث گلیشیرز کے پگھلنے کی رفتار کم رہنے کے باعث دریاوں میں پانی کی آمد میں کمی کی وجہ سے زرعی شعبہ کو پانی کی کمی کا سامنا بھی رہا۔

لیکن اس کے باوجود گذشتہ مالی سال کے دوران زرعی شعبہ کی شرح ترقی میں بہتری آئی ہے جس سے ملک غذائی حوالے سے خود کفیل ہوا ہے بلکہ ضرورت سے زائد زرعی اجناس کی برآمدات سے قیمتی زرمبادلہ بھی کمایا جارہا ہے۔

 

Courtesy:express

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More