امریکی سائنسدان :خطے میں غذائی استحکام اور زرعی خوشحالی کو یقینی بنایا جا سکتا ہے

زرعی یونیورسٹی فیصل آبادہینڈ آؤٹuaf_agri_unvفیصل آباد22جنوری 2013ء ( ) امریکی یونیورسٹی کیلیفورنیا کے سائنسدان جیم ہل نے کہا ہے کہ پاک امریکہ و افغانستان سہہ فریقی باہمی تعاون کو فروغ دے کر خطے میں غذائی استحکام اور زرعی خوشحالی کو یقینی بنایا جا سکتا ہے ان باتوں کا اظہار انہوں نے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد میں منعقدہ 6 روزہ ورکشاپ برائے پاکستان و افغانستان کے نوجوان زرعی ماہرین کی توسیعی مہارت سے بطور مہمان خصوصی اپنے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ امریکہ افغانستان اور پاکستان میں زرعی شعبے کی ترقی کیلئے بھر پور تعاون کر رہا ہے اس سلسلے میں سہہ فریقی تعاون کی یہ چوتھی تر بیتی ورکشاپ جہاں دونوں ملکوں کے سائنسدانوں اور نوجوان ماہرین کی استعداد کار میں اضافے کا باعث بنے گی وہاں خطے کے کسانوں کو جدید زرعی ٹیکنالوجی کی منتقلی کیلئے توسیعی ماہرین کو نئی سمت متعین کرنے میں مدد گار ثابت ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ہمسایہ ممالک کے توسیعی ماہرین ‘ لائیو سٹاک ‘ ہارٹیکلچر ‘ دالوں ‘ جنگلات اور پوسٹ ہارویسٹ کے شعبوں میں اپنی مہارتوں کو بہتر انداز سے بروئے کار لا کر نہ صرف پیدا واری حجم بڑھا سکتے ہیں بلکہ دیہی سطح پر غربت کے خاتمے کے لئے بھی اہم کر دار ادا کر سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ بڑھتی ہوئی آبادی کیلئے غذائی ضروریات پوری کرنا عالمی سطح پر ایک اہم مسئلہ بن چکا ہے جسے اس قسم کے تر بیتی پرو گراموں کے ذریعے حل کرنے کی کوششیں کی جانی چاہئیں ۔ تقریب سے پرو گرام کے آرگنائزر و ڈائریکٹر دفتر تحقیق اختراعات و تجارت سازی پروفیسر ڈاکٹر آصف علی نے 6روزہ چوتھی بین الاقوامی تر بیتی ورکشاپ کے خدو خال بیان کرتے ہوئے کہا کہ اس دوران امریکہ سے آئے ہوئے ماہرین جیری پیٹر‘ چک شسٹر‘ پین کوک کریس ‘لوئس فرگوسن ‘گرانٹ ڈیول اور جیکلین ویلسن سمیت دیگر سائنسدان دونوں ممالک کے نوجوان سائنسدانوں اور زرعی شعبہ سے وابستہ ماہرین کو توسیعی شعبے سے متعلق نئی جہتوں سے آگاہ کریں گے ۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کے مختلف صوبوں سے آئے ہوئے ماہرین جہاں پاکستانی زرعی شعبے سے وابستہ لوگوں کے تجربات سے استفادہ کریں گے وہاں پاکستانی ماہرین کو بھی اپنے ہمسایہ ملک کے ماہرین سے سیکھنے کے مواقع میسر آئیں گے ۔ تقریب سے دیگر امریکی ماہرین نے بھی خطاب کیا ۔

Copyright @ Zaraimedia.com

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More