پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل نے لائف ممبر شپ ختم کر دی

پانچ سال کے لیے رجسٹریشن و سالانہ فیس 10 ہزار روپے ہو گی ، سٹوڈنٹس کو بھی ممبر شپ حاصل کرنا ہو گی

Pakistan Veterinary Medical Council       ( پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل)
Pakistan Veterinary Medical Council ( پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل)

اسلام آباد (نیوز ویوز سروس) پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل نے فیصلہ کیا ہے کہ آئندہ پی وی ایم سی کی طرف سے رجسٹرڈ ویٹرنری میڈیکل پریکٹیشنر کے لیے پانچ سال کی رجسٹریشن اور سالانہ فیس وصول کی جائے گی، اور ہر پانچ سال بعد ممبرز اپنی تجدید ممبر شپ فیس ادا کریں گے۔ کونسل نے لائف ممبر شپ ختم کر دی ہے ۔ تاہم جن ممبران نے پہلے لائف ممبر شپ حاصل کی ہے ان کو یہ ممبر شپ اور اس کے فوائد حاصل رہیں گے۔ پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل کے صدر ڈاکٹر محمد ارشد نے نیوز ویوز سروس کو بتایا کہ کونسل کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے اجلاس میں بحث و تمحیص کے بعد متعدد فیصلے کیے گئے ہیں ۔ اسی طرح یہ بھی فیصلہ کیا گیا ہے کہ ڈی وی ایم کے ڈگری پروگرام میں داخلہ حاصل کرنے والے طلباء کی بھی بطور سٹوڈنٹس ممبر شپ پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل میں منظور کی جائے ۔ ان کے لیے فی سمسٹر فیس 200 روپے ہو گی ۔ اسی طرح ایم فل میں داخلہ کے لیے سٹوڈنٹس ممبر شپ 2000 روپے فی سمسٹر ہو گی اور پی ایچ ڈی میں داخلے کے لیے سٹوڈنٹس ممبر شپ فیس 5000 روپے فی سمسٹر ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ اس کا مقصد ملک میں ویٹرنری ایجوکیشن کے معیار کو بہتر کرنا اور ملکی ضروریات کے مطابق ویٹرنری گریجوایٹس کی پیداوار کے اہداف متعین کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لائف ممبر شپ اس لیے ختم کی گئی ہے کہ پانچ سال بعد ہر ممبر کو تجدید ممبر شپ کروانی پڑے اور اس کے کوائف بھی اپ ڈیٹ ہو سکیں۔

ویٹرنری ایجوکیشن کے اداروں میں تمام اساتذہ پر بھی ممبر شپ حاصل کرنا لازمی ہو گا اور ہر فیکلٹی کے لیے رجسٹریشن لازمی ہو گی جو 5000 روپے فی ممبر ہو گی۔ پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل کی ایگریکٹیو کمیٹی نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ ملکی قوانین کے مطابق نجی شعبہ میں بھی ویٹرنری ڈاکٹرز کی رجسٹریشن کے لیے مہم چلائی جائے کیونکہ ملکی قوانین کے مطابق کوئی بھی ویٹرنری ڈاکٹر پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل سے رجسٹریشن حاصل کیے بغیر نہ تو سروس کر سکتا ہے اور نہ ہی کوئی کاروبار کر سکتا ہے ۔ اس لیے تمام ویٹرنری ڈاکٹرز کو ہدایت کی جاتی ہے کہ وہ فوری طور پر پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل سے رجسٹریشن حاصل کریں ، ورنہ ملکی قوانین کے تحت کاروائی ہو گی۔
دریں اثناء یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل کے مرکزی سیکرٹریٹ کی تعمیر کے لیے کام کا آغاز کر دیا جائے جس کے لیے حکومت پہلے ہی پی وی ایم سی کو پلاٹ الاٹ کر چکی ہے اور پی وی ایم سی اپنے وسائل سے 75 لاکھ روپے کی رقم حکومت کو ادا کر چکی ہے ۔ ابتدائی طور پر پی وی ایم سی اپنے وسائل سے بیسمنٹ ، گراؤنڈ فلور اور میزانین فلور تعمیر کرے گی۔

دریں اثناء کونسل کے ایک ترجمان نے یہ بھی بتایا کہ پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل مستقبل میں ویٹرنری ایجوکیشن کے معیار کی بہتری کے لیے آن لائن ایگزامینیشن اور مختلف ریفریشر کورسز کا بھی انعقاد کرے گی۔ ترجمان نے مزید بتایا کہ کونسل کی طرف سے ممبران سے انٹریکشن کے لیے لائحہ عمل بھی ترتیب دیا جا رہا ہے ۔ کونسل کی ویب سائٹ اپ ڈیٹ کی جا رہی ہے اور کونسل کی طرف سے تمام ممبران کو دعوت عام ہے کہ وہ اپنی تجاویز اور مشوروں سے براہ راست کونسل کو آگاہ کریں ۔ جس کا رابطہ درج ذیل ہے

پاکستان ویٹرنری میڈیکل کونسل (حکومت پاکستان ) ہاؤس نمبر 850 سٹریٹ نمبر 26 سیکٹر G-9/1 اسلام آباد ۔ فون +92-51-9262108 :
فیکس +92-51-9262106 :
رابطہ کونسل صدر ڈاکٹر محمد ارشد موبائل 0322-3055552 :
سیکرٹری ؍ رجسٹرار کرنل محمدعلی اصغر رضا موبائل 0331-8700700 :
ڈاکٹر خالد محمود شوق کنوینئرپریس، پبلیکیشن، کوآرڈینیشن اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی اسٹینڈنگ کمیٹی موبائل 0300-6620616 :

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More