پاکستانی اور بھارتی پنجاب کے مابین زرعی خوشحالی اور کاروباری فروغ

بھارتی ٹریکٹر
بھارتی ٹریکٹر

فیصل آباد 29دسمبر 2012ء:پاکستانی اور بھارتی پنجاب کے مابین زرعی ماہرین ‘ انجینئرز اور پالیسی سازحکام کے باہمی تبادلوں سے دونوں صوبوں کے درمیان زرعی خوشحالی اور کاروباری فروغ کیلئے مضبوط بنیاد فراہم ہوگی۔ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کو بھارتی پنجاب سے لاہور آنے والے نائب وزیراعلیٰ سکھبیرسنگھ بادل کے ہاتھوں جس بھارتی ٹریکٹر کی چابیاں فراہم کی گئی تھیں وہ ٹریکٹر وزیراعلیٰ پنجاب کی طرف سے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کی زرعی شعبہ میں مثالی خدمات اور وسیع کردار کی وجہ سے یونیورسٹی انتظامیہ کے حوالے کر دیا گیا ہے تاکہ یونیورسٹی انجینئرز اس کا جائزہ لیتے ہوئے اس کے مثبت پہلوؤں کو مقامی مشینری کا حصہ بناسکیں۔ یہ باتیں زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے وائس چانسلرپروفیسراقرار احمد خاں نے کلیہ زرعی انجینئرنگ و ٹیکنالوجی کے اساتذہ سے ملاقات کے دوران بتائیں۔ بھارتی پنجاب کی طرف سے ملنے والے ٹریکٹر کو دونوں صوبوں کے درمیان بڑھتے ہوئے دوستانہ تعلقات کا خوبصورت تحفہ قرار دیتے ہوئے ڈاکٹر اقرار احمد خاں نے بتایا کہ دونوں پنجاب ایک دوسرے کو سبزیات‘ کینو‘ آم اور ٹماٹربرآمدکرکے ان پھلوں اور سبزیوں سے وابستہ لاکھوں کسانوں کے وسائل میں اضافہ کر سکتے ہیں۔ بھارت میں پنجاب زرعی یونیورسٹی لدھیانہ کی گولڈن جوبلی تقریبات میں پاکستانی پنجاب کے وفد کے حالیہ دورے کو کامیاب اور تعمیری قرار دیتے ہوئے وائس چانسلرپروفیسرڈاکٹر اقرار احمد خاں کا کہنا تھا کہ دونوں صوبے ماہرین ‘ انجینئرز اور زرعی مشینری کے ساتھ ساتھ طریقہ ہائے کاشت و آبپاشی کے بارے میں ایک دوسرے کے تجربات سے فائدہ اُٹھا کر زرعی ترقی سے دیہی اقتصا دیات میں بہتری لانے کے راستے پر گامزن ہیں جس کے مثبت نتائج برآمد ہونگے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی طرف سے زراعت دوست پالیسیوں اور سپلائی چین امپرومنٹ کے حوالے سے دو ارب روپے کا منصوبہ شروع کرنے سے زرعی مارکیٹنگ میں حائل رکاوٹیں دور ہونگی اور برآمدات میں اضافہ ہوگا۔

زرعی یونیورسٹی فیصل آباد ہینڈ آؤٹ

Courtesy: Zarai Media Team

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More