نیما ٹوڈز سے پھیلنے والی بیماریوں کے انسداد

نیما ٹوڈز سے پھیلنے والی بیماریوں کے انسداد کے سلسلے میں منعقدہ ایک ورکشاپ
نیما ٹوڈز سے پھیلنے والی بیماریوں کے انسداد کے سلسلے میں منعقدہ ایک ورکشاپ

لاہور :22دسمبر 2012:پودوں کی بیماریوں پر قابو پانے کے لیے غیر کیمیائی طریقوں کو فروغ دینے کی ضرورت ہے ۔یہ بات ڈاکٹر نورالاسلام ڈائریکٹر جنرل ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد نے ادارہ میں نیما ٹوڈز سے پھیلنے والی بیماریوں کے انسداد کے سلسلے میں منعقدہ ایک ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اس ورکشاپ میں ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کے پودوں کی بیماریوں کے انسداد پر تحقیق کرنے والے سائنسدانوں اور کاشتکاروں کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ڈاکٹر نورالاسلام نے زرعی سائنسدانوں پر زور دیا کہ وہ فصلوں کی ایسی اقسام وضع کریں جو بیماریوں کے خلاف قوت مدافعت رکھتی ہوں ۔انہوں نے کہا کہ نیما ٹوڈز سے پھیلنے والی بیماریوں کی وجہ سے سبزیوں کی پیداوار میں کافی حد تک کمی واقع ہو تی ہے ۔اس سلسلے میں کاشتکارو ں میں شعور اُجاگر کرنے کی ضرورت ہے ۔ان بیماریوں پر جو تحقیق کی گئی ہے اس سے کاشتکاروں کو بھی آگاہ کیا جائے تاکہ وہ بیماریوں کا انسداد کر کے سبزیوں کی پیداوار میں اضافہ کر سکیں۔پنجاب زرعی تحقیقاتی بورڈ کے پروجیکٹ ڈائریکٹر ڈاکٹر نذیر جاوید نے بتایا کہ یہ پروجیکٹ زرعی یونیورسٹی فیصل آباد اور ایوب زرعی تحقیقاتی ادارہ فیصل آباد کے تعاون سے چلایا جا رہا ہے اوراس کا مقصد سبزیوں میں نیما ٹوڈز کے ذریعے پھیلنے والی جڑوں کی بیماریوں کے انسداد کے طریقے دریافت کرنا ہے۔انہوں نے بتایا کہ بیماریوں کے انسداد کے لیے زہروں کا استعمال بہت نقصان دہ ہے ۔اس پروجیکٹ کے ذریعے ہونے والی تحقیق سے دریافت ہونے والے طریقوں سے بیماریوں کے انسداد میں کامیابی حاصل ہوئی ہے ۔جناب الطاف حسین ڈائریکٹر پتھالوجی ریسرچ انسٹی ٹیوٹ نے بھی کاشتکاروں سے خطاب کیا اور اپنے ادارے میں ہونے والی سرگرمیوں سے آگا ہ کیا۔
***
نظامت زرعی اطلاعات پنجاب
21۔ سر آغا خان سوئم روڈ لاہور
E.mail:ziratnama@hotmail.com، Ph.042-99200731, 99200729, Fax No. 042/99202911
ہینڈ آؤٹ

Courtesy: Zarai Media

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More